آستان قدس رضوی عتبات عالیات کے منتظمین کے درمیان ایک نیٹ ورک تیار کرنا چاہتا ہے
منگل , 09/08/2020 - 11:07
آستان قدس رضوی  عتبات عالیات کے منتظمین کے درمیان ایک  نیٹ ورک تیار کرنا چاہتا ہے
امام رضا(ع) یونیورسٹی کے سربراہ نے بتایا کہ آستان قدس رضوی کا ویژن مقدس مزارات کے منظمین کے مابین نیٹ ورک قائم کرنا ہے کیونکہ مقدس مقامات کی انتظامیہ کے درمیان تجربات اور علم و دانش کے باہمی تبادلے سے ہی مقدس مقامات کے پروگراموں کو مزید بہتر بنایا جاسکتا ہے ۔

آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق؛ امام رضا بین الاقوامی یونیورسٹی کے وائس  چانسلر  ڈاکٹر مرتضیٰ مرجوعی نے آستانہ مقدسہ حسینی یعنی حضرت امام حسین علیہ السلام کےحرم سے وابستہ   الزھرا(س) یونیورسٹی کی سربراہ محترمہ ڈاکٹر زینب سلطانی  اور ان کے ہمراہ  وفد سے ملاقات کے دوران کہا کہ آستان قدس رضوی مقدس مزارات کے مابین ایک نیٹ ورک تیار کرنا چاہتا ہے  اس کے علاوہ امام رضا(ع) انٹرنیشنل یونیورسٹی میں مقدس مزارات کی منیجمنٹ کے عنوان سے ایک مضمون اضافہ کیا گیا ہے جس کا مقصد  مقدس مزارات کے  ذمہ دار اور ماہر منتظمین کی تربیت اور ٹریننگ دینا ہے ۔   انہوں نے کہا کہ اب تک امامین جوادین(ع) کے مقدس مزار کے منتظمین اس مضمون میں تعلیم مکمل کر چکےہیں۔
عتبات  عالیات یا مقدس مزارات کےمنتظمین  اور اراکین  کے لئے شارٹ کورسسز کا انعقاد
امام رضا بین الاقوامی  یونیورسٹی کے وائس چانسلر  نے  عتبات عالیات  سے وابستہ یونیورسٹیوں کے ساتھ مشترکہ کورسسز  کے انعقاد اور اب تک طے پانے والے معاہدوں  کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اس سے پہلے امام رضا(ع) انٹرنیشنل یونیورسٹی  اور عتبہ عباسیہ یعنی حضرت ابوالفضل العباس  علیہ السلام کے حرم سے وابستہ  الفکیل یونیورسٹی کےمابین    باہمی تعاون کا سمجھوتہ ہوا ہے    اور آستان مقدس امامین جوادین(ع)یا کاظمین کے حرم   کے اراکین کے لئے شارٹ کورسسز کا انعقاد بھی کیا جا چکا ہے۔
  ڈاکٹر رجوعی کا کہنا تھا کہ مختلف ممالک سے سالانہ دوکروڑ سے زائد زائرین عراق میں  اربعین حسینی کے پیدل مارچ میں شرکت کرتے ہیں اس لئے  ضروری سمجھتا ہوں کہ اس عظیم واقعہ کا علمی لحاظ سے تجزیہ و تحلیل اور ان کے نتائج   مختلف جرائد اور اجلاس میں پیش کئے جانے چاہئيں ۔
انہوں نے  کہا  کہ امام رضا(ع) انٹرنیشنل یونیورسٹی کی تأسیس کو۲۱ سال گزر چکے ہیں اور ان برسوں  میں اب تک ۱۰ ہزار طالب علم اس یونیورسٹی سے تعلیم مکمل کر کے جا چکے ہیں۔
ان کا مزید  کہنا تھا کہ یہ ایک جامع یونیورسٹی ہے اور آئین کے مطابق جو کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی سپریم کونسل میں منظور ہوا تھا یہ یونیورسٹی  تمام سبجیکٹ اور فیکلٹیز میں اپنی سرگرمیوں کو توسیع دے سکتی ہے۔
ایرانی طلبا  کے ساتھ عراقی طلبا  کی مشترکہ کلاسز اور تعلیم
امام رضا  بین الاقوامی  یونیورسٹی کے  وائس چانسلر  مرجوعی نے بتایا کہ اس یونیورسٹی میں  طلبا اور طالبات  کے لئے دو مستقل تعلیمی شعبے ہیں اس وقت سات ہزار طالب علم تحصیل علم میں مصروف ہیں جن میں ایک ہزار طالب علم غیرملکی ہیں اور ان میں سے ستر فیصد طالب علم عراقی ہیں جو ایرانی طلبا کے ساتھ مشترکہ کلاسوں میں مل کر تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔
انہوں نے بتایا کہ غیرملکی طلبا کے لئے فارسی زبان کی تعلیم کے لئے چھ مہینے کا کورس رکھا جاتا ہے اس وقت ۲۳۰ عراقی طلبا کے لئے یہ کورس آنلائن شروع ہو چکا ہے۔
انہوں نے بتایا کہ امام رضا(ع) انٹرنیشنل یونیورسٹی ملک کی واحد ایسی پرائیویٹ یونیورسٹی ہے جس کے پاس انٹرنیشنل لائنسز کے علاوہ اعلی تعلیم کی وزارت  سے غیرملکی طلباکی سہولت کے لئے ہر طرح کے قانونی اجازت نامے موجود ہیں     ۔
انہوں نے بتایا کہ یونیورسٹی کے شعبہ  قونصلر امور   میں غیرملکی طلبا کے لئے تعلیمی ویزا اور اقامت کی اجازت جاری کی جاتی ہے  جس کے پیش نظر غیر ملکی طلبا کافی مطمئن ہیں ۔
ایران کی سب سے اعلیٰ غیرسرکاری یونیورسٹی
  ڈاکٹر رجوعی نے بتایا کہ خطے میں عالم اسلام کے علوم ISC کی جدید ترین درجہ بندی میں امام رضا(ع) انٹرنیشنل یونیورسٹی کو ایران کی سب سے اعلیٰ غیرسرکاری یونیورسٹی قرار دیا گیا ہے۔
امام حسین علیہ السلام کے حرم   کی الزہرا(س) یونیورسٹی کی سربراہ محترمہ زینب سلطانی نے بھی اس ملاقات میں کہا کہ آستانہ مقدسہ حسینی سے دو یونیورسٹیاں وابستہ ہیں الزھرا(س) یونیورسٹی اور الوارث یونیورسٹی،انہوں نے بتایا کہ الزہرا(س) یونیورسٹی صرف خواتین کے لئے ہے۔
الزہرا(س) یونیورسٹی میں   ایک ہزار سے زائد طالبات زیر تعلیم ہیں اس یونیورسٹی کی تین  فیکلٹیاں ہیں  جو  فارمیسی ، پیرا میڈيکس اور منیجمنٹ  کی ہیں  
ملاقات کے اختتام پر امام رضا(ع) یونیورسٹی میں پائے جانے والے بہترین وسائل کی طرف اشارہ کرتے ہوئے الوارث اور الزہرا(س) یونیورسٹی کے ساتھ دو طرفہ تعاون کی ضرورت پر زور دیا گيا
قابل ذکر ہے  کہ الزہرا(س) یونیورسٹی کی سربراہ نے وفد کے ہمراہ امام رضا (ع) انٹرنیشنل یونیورسٹی کے شعبہ خواہران کا وزٹ بھی کیا۔

 

ماخذ :