فرانسیسی میگزین کے گھناؤنے اقدام کے خلاف مذمتی بیان
اتوار , 09/13/2020 - 23:33
  فرانسیسی میگزین  کے گھناؤنے اقدام کے خلاف مذمتی بیان
آستان قدس رضوی کے علمی اور ثقافتی ادارے نے پیغمبر عظیم الشان اسلام حضرت محمد مصطفیٰ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی شان میں گستاخی کرنے کے مبنی پر فرانسیسی میگزین کے گھناؤنے اقدام کی مذمت میں بیان جاری کیا ہے

آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق :اس  مذمتی بیان کا  متن  اس طرح  ہے 
باسمه‌تعالی
يُرِيدُونَ لِيُطْفِئُوا نُورَ اللَّهِ بِأَفْوَاهِهِمْ وَاللَّهُ مُتِمُّ نُورِهِ وَلَوْ كَرِهَ الْكَافِرُونَ
  رحمت  للعالمین حضرت محمد بن عبد اللہ صل اللہ علیہ وآلہ وسلم  کی شان اقدس میں فرانسیسی میگزین  شارلی ایبدو  کا گستاخانہ ،  گھناؤنا اور    اہانت   آمیز   اقدام    در حقیقت عالمی سامراج  کی سازشوں کے سلسلے کی ایک  اور  کڑی ہے  اور  اسی کڑی میں  غاصب صیہونی حکومت کے ساتھ  بعض  پست  اور غدارنیز رجعت پسند عرب حکومتوں کے  حکمرانوں  کے ذریعے جو  بڑی طاقتوں کے ایجنٹ ہيں  تعلقات کی برقراری  کا فتنہ  بھی کھڑا کیا جارہا ہے  اور اس  تناظر میں شکست  خوردہ سینچری ڈیل منصوبے کے بانی عناصر کے ہاتھوں   اس منصوبے کو دوبارہ زندہ کرنے کی کوشش کی جارہی   ہے 
عالمی سامراج  اور اس   سے وابستہ ذرائع ابلاغ کی اسلام دشمنی  پرمبنی پالیسیوں اور پروپیگنڈوں سے یہ بات ثابت ہوجاتی ہے  کہ   عالمی سامراج  اسلام کی بڑھتی ہوئي مقبولیت اور پوری دنیا میں اس کے پھیلتے ہوئے اثر ات نیز پیغمبراسلام صل اللہ علیہ وآلہ وسلم سے  بے پناہ عقیدت و محبت  میں روز افزوں اضافے   سے بری  طرح خوف زدہ  ہے 
انسانی حقوق کے جھوٹے دعویدار  جو  انسانی شرف  و کرامت کے اپنے جھوٹے نعروں سے آسمان  سر   پر اٹھائے رہتے ہيں  ایک ایسے وقت  اشرف مخلوقات  کی نورانی شخصیت    اور خاتم انبیائے الہی کی شان میں گستاخی  کو روا   سمجھ  رہے ہيں  جب ڈ یڑھ ارب سے زائد انسان اس پیغمبر عظیم الشان  کے نام  اور ذات اقدس  سے والہانہ عشق و محبت کرتے ہیں  اور ہرلمحے  آنحضرت  کے حضور درود و سلام کا نذرانہ پیش کرتے ہیں    
ہر طرح کی اخلاقی اقدار  سے عاری  جریدے     شارلی  ایبدو میں توہین آمیز خاکے شائع کئے جانے  والے اقدام     نے نہ فقط پورے عالم اسلام بلکہ ادیان الہی کے ماننے والوں اور پوری دنیا کے حریت پسندوں کے دلوں کو مجروح کیا ہے ۔
یہ کتنی بڑی جہالت  ہے کہ الہی ادیا ن اور پیغمبران الہی     کی توہین کو آزادی بیان  اور روشن خیالی کا نام دیا جائے   ، پوری دنیا کے اربوں مسلم اور غیر مسلم افراد  جن کی مقدس کتابیں  توریت اور انجیل بھی  ہیں  اور   موجودہ دور  کی    انسانیت   کی اخلاقیات او رتہذیب و تمدن  کا  ایک بڑا حصہ  انہی  ،آسمانی کتب کی تعلیمات  کی مرہون منت  ہے      اس  اقدام کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہيں اور  دل کی گہرائیوں سے  ان کی آواز  یہی ہے کہ  :
إِنَّ اللَّهَ وَمَلَائِكَتَهُ يُصَلُّونَ عَلَى النَّبِيِّ يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا صَلُّوا عَلَيْهِ وَسَلِّمُوا تَسْلِيمًا
غم واندو ہ    کے ساتھ ہم یہ  اعلان کرنا چاہتے ہیں  کہ عصر حاضر میں ثقافت اور اخلاقیات  ٹیکنالوجی کے  سا تھ سازگار نہيں ہوسکی ہیں   اسی لئے آج ہر دور سے کہیں زیادہ  ضرورت اس بات کی ہے کہ  مشینی تمدن میں آسمانی حقائق او رمعنویت  کو پوری عقلانیت کے ساتھ  اجاگر کریں اور لوگوں میں اس کا احساس جگائيں    
اس طرح کے ظالمانہ اور مجرمانہ اقدامات اور فتنوں کا   اصل ذمہ دار تسلط پسند انہ نظام  اور سامراجی سرشت ہے  کہ جس کے سرغنے امریکا کے نسل پرست حکام اور بچوں کی قاتل صیہونی حکومت    اور عالمی صیہونیزم ہے   
آستان قدس رضوی کا  علمی او رثقافتی ادارہ  امام  رافت و عقلانیت  حضرت  ثامن  الحجج  علیہ افضل التحیہ و الثنا   کی اعلی تعلیمات سے   سبق   لے کراور  ان کی تعلیمات کی پیروی کرتے ہوئے  اس شیطانی اقدام  اور سازش کی مذمت کرتا ہے  اور    ایران اور دنیا کے دیگر ملکوں کے وکلا   و قانون دانوں نیز سفارتی اداروں سے مطالبہ کرتا ہے کہ  اس شرمناک اقدام کے مرتکبین کے خلاف قانونی  کارروائی  کريں   - یہ ادار ہ   اس بات پر یقین رکھتا  ہے کہ بشریت کی نجات کا  واحد راستہ  عالمی سامراج کے چنگل سے رہائي  اور نئی اسلامی تہذیب و تمدن  کا  قیام   ہے 
وَلِلَّهِ الْعِزَّةُ وَلِرَسُولِهِ وَلِلْمُؤْمِنِينَ وَلَٰكِنَّ الْمُنَافِقِينَ لَا يَعْلَمُونَ
آستان قدس رضوی کا علمی و ثقافتی ادارہ 
 

ماخذ :