شیخ زکزاکی کے افکار کو پوری دنیا میں عام کیا جائے ؛ خطیب حرم امام رضا(ع)
جمعرات , 02/18/2021 - 23:50
شیخ زکزاکی  کے افکار کو پوری دنیا میں عام کیا جائے ؛ خطیب حرم امام رضا(ع)
حضرت امام علی رضا علیہ السلام کے حرم مطہر کے خطیب نے نائجیریا کے شہر زاریا کے شہدا کے اہل خانہ سے ملاقات میں کہا کہ شیخ زکزاکی عصر حاضر میں حسینی تحریک کے علمبردار ہیں اس لئے ان کے افکار کو نہ فقط نائجیریا بلکہ پور دنیا میں عام کرنے کی ضرورت ہے

آستان نیوز کی رپورٹ کے مطابق  حرم مطہر رضوی کے رواق دارالرحمۃ میں آستان قدس رضوی کے غیرملکی ادارے کی میزبانی میں سانحہ  زاریا  کے شہدا    کے کچھ    اہلخانہ سے انجام پانے والی  ملاقات میں  جامعۃ المصطفیٰ العالمیہ خراسان    کے ثقافتی  امور کے مشیر اور حرم  کے خطیب   حجت الاسلام والمسلمین حسن مہدویان نے   کہا  کہ انفاق فی سبیل اللہ کا سب سے بڑا مصداق یہ ہے کہ انسان اپنے اہل و عیال کو خدا کی راہ میں قربان کر دے اور اسی وجہ سے قیام عاشورا پورے عالم میں گونج رہا ہے کیونکہ حضرت امام حسین علیہ السلام نے اسلام کی راہ میں اپنے پورے خاندان کو قربان کر دیا۔ انہوں نے  کہا کہ شیخ زکزاکی نے بھی حضرت ابا عبد اللہ الحسین علیہ السلام کی راہ پر چلتے ہوئے خود کو اور اپنے  گھر والوں کو  اخلاص کے ساتھ اس راہ  میں  وقف کر دیا۔ 
ان کا مزید   کہنا تھا کہ عاشورا فقط ۶۱ ہجری سے مخصوص نہیں ہے بلکہ آج کے دور میں بھی شمر و یزید پائے جاتے ہیں جو کہ امام حسین(ع) کے دور کے شمر و یزید سے  جیسے ہی  شقی القلب اور جلاد صفت ہیں  ان  کا کہنا تھا کہ  ، ہمیں ۶۱ ہجری کے عاشورا سے سبق لیتے ہوئے یہ بتانا ہوگا کہ ہم ہمیشہ سے امام حسین علیہ السلام کے یار و مددگار ہیں۔
حجت الاسلام مہدویان نے اس  بات کا ذکرکرتے ہوئے کہ   سعادت و خوشبختی اور عاقبت  بخیر  ہونا  فقط اہلبیت علیہم السلام کی پیروی سے ممکن ہے کہا کہ قرآن کریم اور اہلبیت (ع) در حقیقت انسانوں کی ہدایت کے  دو  راستے ہیں اس لئے ہمیں ایسی راہ پر چلنا ہوگا جس سے سیرت اہلبیت (ع) ہماری زندگیوں میں  مجسم ہوسکے ۔ 
 اس ملاقات میں  سانحہ زاریا  کے شہداء کے والدین  اور بیواؤں  کے علاوہ شیخ زکزاکی کی تین بیٹیاں بھی موجود تھیں  ۔ ملاقات کے اس پروگرام میں زیارت امین اللہ اور حضرت امام علی رضا علیہ السلام کی مخصوص صلوات کی قرائت کے علاوہ   مرثیہ خوانی بھی ہوئي  اور  حاضرین کو    متبرک تحائف  بھی دئے گئے