دانشوروں کی نظر میں حضرت امام علی رضا(ع) کی عظمت
منگل , 04/27/2021 - 16:21

اگرچہ حضرت امام علی رضا(ع) کا مقام امامت ہی ان کی بلند و بالا عظمت سے روشناس اور آگاہ ہونے کے لئے کافی ہے لیکن اس سے متعلق دانشوروں اور بزرگوں کے کلمات بیان کرنا عمومی اذہان کے لئے کافی حد تک مؤثر ہے۔
مامون عباسی جو کہ خلیفہ وقت ہونے کے ساتھ ساتھ ایک علمی شخصیت جانی جاتی تھی،باوجود اس کے کہ اس کا شمار حضرتؑ کے دشمنوں میں ہوتا ہے وہ امام رضا(ع) کے بارے میں کہتا ہے: ’’ما اعلم احدا افضل من ھذا الرجل۔یعنی الرضاؑ۔ علی وجہ الارض‘‘( میں روئے زمین پر اس شخص( یعنی حضرت رضاؑ) سے افضل کسی کو نہیں جانتا)۔
جمال الدین احمد بن علی نسّابہ جو کہ ابن عنبہ کے نام سے معروف ہے ؛ کہتا ہے: امام رضا(ع) جن کی کنیت ابوالحسنؑ ہے  اور ابوطالبؑ کی اولاد میں سے ہے اپنے زمانے میں بے مثل و بے نظیر تھے۔
’’ذہبی‘‘ جس کا اہلبیت عصمت و طہارت سے منحرف ہونا مشہور ہے، حضرت امام علی رضا علیہ السلام کے بارے میں کہتا ہے کہ وہ اپنے زمانے میں بنی ہاشم کے سید و سردار اور ان میں بردبار ترین اور عقلمند ترین فرد تھے۔ ۔ ۔
ابا صلت ہروی جو کہ اپنے زمانے کی نامور شخصیت تھے ، کہتے ہیں: میں نے کسی کوعلی بن موسیٰ الرض(ع) سے دانا تر نہیں دیکھا اور جس اہل علم نے بھی حضرت کو دیکھا اس نے میری اس بات کی گواہی دی ۔
’’ابراہیم بن عباس‘‘ کہتا ہے: میں نے کبھی نہیں دیکھا کہ حضرت رضا(ع) سے کوئی بات پوچھی گئی ہو اور آپؑ اس سے آگاہ نہ ہوں، میں نے گزشتہ تاریخ سے اپنے زمانے تک ان سے زیادہ آگاہ اور دانا تر کسی کو نہیں دیکھا، مامون ہمیشہ ان کو مختلف قسم کے سوالات کر کے آزماتا تھا اور وہ کامل و تشفی بخش جواب دے کر اس کو ساکت کردیتے تھے۔