اجمالی تعارف
منگل , 04/27/2021 - 16:26

آپؑ شیعوں کے آٹھویں امام ہیں؛ آپؑ کا اسم گرامی علیؑ ، والد بزرگوار کا نام حضرت امام موسیٰ بن جعفر الصادقؑ اور والدہ گرامی کا نام نجمہ/تکتم ذکر ہوا ہے آپؑ کی مشہور کنیت ابوالحسنؑ اور لقب رضاؑ ہے آپؑ کی ولادت با سعادت 11ذیقعد148   ہجری قمری مدینہ منورہ میں ہوئی، شیعوں کے نویں امام حضرت امام محمد تقی (ع) آپؑ کے تنہا فرزند ہیں ۔ آپؑ کے دور امامت میں منصور دوانیقی،مہدی عباسی،ہادی عباسی،ہارون الرشیدعباسی، محمد امین عباسی اور مامون عباسی حاکم وقت رہے ہیں۔ مشہور قول کی بنا پر آپ کی عمر مبارک 55 سال ہے، مامون عباسی نے 203 ہجری قمری کے ماہ صفر کی آخری تاریخ کو آپؑ کو زہر سے شہید کیا۔آپؑ کا روضہ مبارک اسلامی جمہوریہ ایران کے شہر مشہد مقدس میں واقع ہے۔
ولادت:
حضرت امام علی رضا(ع) کی مادرِ گرامی حضرت نجمہ(س) کہتی ہیں:’’ میں اپنے بیٹے علیؑ کی حاملگی کے ایّام میں ہرگز کسی قسم کی سنگینی کا احساس نہیں کرتی تھی اور سوتے وقت اپنے اندر سے خداوند عالم کے ذکر کی آواز سنتی تھی ، جس سے میں خائف  ہوجاتی،آپؑ جب دنیا میں تشریف لائے تو ہاتھ پاؤں زمین پر رکھے اور سر کو آسمان کی جانب بلند کیا جیسے کوئی کلام کرتا ہے اس طرح آپؑ کے لب مبارک جنبش کر رہے تھے۔‘‘
حضرت امام موسیٰ کاظم علیہ السلام نے جب اپنے بیٹے کو دیکھا تو فرمایا:’’ ھنیٔاً لک یا نجمۃ کرامۃ ربک‘‘ اے نجمہ! تمہیں پروردگار کی طرف سے بزرگوار و کرامت مبارک ہو۔’’پھر مولود کو سفید کپڑے میں لپیٹ کر حضرتؑ کو دیا گیا،امام موسیٰ کاظم علیہ السلام نے اپنے بیٹے کے دائیں کان میں اذان اور بائیں میں اقامت کہی پھر آبِ فرات طلب فرمایا جس سے اپنے بیٹے کو گھٹی پلائی، اس کے بعد امام موسیٰ کاظم علیہ السلام نے حضرت نجمہ (س) سے فرمایا:’’خذیہ فانہ بقیۃ اللہ تعالیٰ فی ارضہ‘‘ اس کو لے لو کہ یہ اللہ کی زمین میں اس کابقیہ(حجت ) ہے۔