امام رضا علیہ السلام کے حرم میں شہید قاسم سلیمانی کی برسی کا پروگرام

منگل , 01/04/2022 - 20:19
امام رضا علیہ السلام کے حرم میں شہید قاسم سلیمانی کی برسی کا پروگرام
سردارمحاذ استقامت شہید جنرل قاسم سلیمانیؒ کی دوسری برسی کی مناسبت سے امام رضا(ع) کے حرم کے رواق امام خمینیؒ میں مجلس ترحیم کا انعقاد کیا گیا جس میں بڑی تعداد میں زائرین اور مجاورین نے شرکت کی

آستان نیوز کے مطابق ملک کے آئمہ جمعہ کے لئے پالیسی وضع کرنے والی  کونسل کے چیئرمین حجت الاسلام والمسلمین محمد جواد حاج علی اکبری  نے مجلس ترحیم کو خطاب کرتے ہوئے  کہا کہ شہید  قاسم سلیمانیؒ ہر لحاظ سے ایک مخلص مومن اور مجاہد  شخص تھے اور ہمیشہ صاحبان معرفت و فکر کے ساتھ نشست و برخاست کرتے تھے ۔ 
حجت الاسلام حاج علی اکبری نے شہید  قاسمؒ  سلیمانی کو مرد مجاہد قراردیتے ہوئے کہا کہ آپ اپنی پوری زندگی میں مجاہد تھے۔  ا نہوں نے اپنی زندگی اندرون ملک اور بیرون ملک خدا کے دشمنوں سے جنگ کرتے گزار دی اور شیاطین کے مقابلے میں آپ ایک مضبوط جہادی شخصیت کے مالک تھے  
حجت الاسلام  حاج علی اکبری نے کہا کہ شہید ح  قاسمؒ عاشق  خدا ،عاشق رسول اور عاشق اہلبیت تھے، ان کا طرز زندگی خدائی عشق و محبت پراستوار تھا،یہ طریقہ اہل معرفت کے نزدیک تقرب خدا کے حصول کا بہترین طریقہ ہے  یعنی یہ وہی طرز زندگی ہے جو اہلبیت علیہم السلام  نے تعلیم دی تھی 
حجت الاسلام حاج علی اکبری نے کہا کہ شہید حاج قاسمؒ ایران کے ساتھ ساتھ  دوسرے ممالک میں بے پناہ مقبول تھے ، درحقیقت خطے میں استقامت کی سنہری زنجیر شہید قاسمؒ کے ہاتھوں سے بنی،انہوں نے استقامت و مقاومت کی اس  زنجیر میں افغانستان ،عراق، شام،  یمن   اور لبنان وغیرہ کو آپس میں جوڑ دیا۔ 
اس پروگرام کے دوران اسلامی تحریک  عہداللہ کے جنرل سیکرٹری  سید ہاشم الحیدری نے ایک ویڈیو پیغام کی  صورت میں خطاب  کرتے ہوئے کہا کہ شہید  قاسم سلیمانیؒ اور شہید ابومہدی المہندس جیسے عظیم سپہ سالاروں کی شخصیت اور زندگی کے بہت سے پہلو ہیں اور ہمیں ان کی زندگی کے تمام اہم پہلوؤں پر غور وفکر کرنی چاہئے۔
انہوں نے اس  بات کا ذکر کرتے ہوئے  کہ شہید حاج قاسمؒ  سلیمانی اپنی زندگی کے تمام پہلوؤں میں مرد اسلام اور مرد میدان ولایت تھے ، کہا کہ وہ بہت سے محاذوں پر موجود تھے ان کا کہنا تھا کہ شہید قاسم سلیمانیؒ اور شہید ابومہدی المہندس  نے ہی  داعش کو شکست دینے میں اہم اور کلیدی کردار ادا کیا  اور اس فتح و کامیابی کا راز ولی فقیہ کی اطاعت و پیروی ہے۔ 
حرم امام رضا(ع) میں ’’مرد میدان‘‘ کے نام سے ایک اور خصوصی پروگرام منعقد کیا گیا جس میں     دنیا کے مختلف ملکوں کی  خواتین نے شرکت  کی،  
 ناصر جہانشاہی نے اس خصوصی پروگرام میں شہید حاج قاسم سلیمانی کی جنگی خصوصیات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ  امریکہ شہید حاج قاسم سلیمانیؒ کو شہید کر کے استقامتی محاذ پر کاری ضرب لگانا چاہتا تھا، امریکیوں کے مقاصد  میں اسلامی جمہوریہ ایران کے اثر و رسوخ کو عالمی سطح پر محدود کردینا،امت مسلمہ کے دل میں ناامیدی پیداکرنا اورامریکی شرائط کو قبول کرنے کے لئے  اسلامی جمہوریہ ایران پر دباؤ ڈالنا وغیرہ شامل تھے۔لیکن خداوند متعال کے لطف و کرم اور شہداء کے مقدس خون کی برکت سے دشمن کے تمام منصوبے شہید قاسم سلیمانیؒ کی شہادت سے ناکام ہوئے کیونکہ دہشتگردی کا یہ حملہ رات کو ہوا جو کہ نہایت ہی بزدلانہ کام تھا،اس کے علاوہ ایران و عراق کے شہداء کے خون کی   آمیزش نے  دونوں ملکوں کے عوام کو  اور زیادہ  قریب و متحد کردیا   اور آج  ایران و  عراق کےعوام کے ساتھ ساتھ پوری  دنیا کے مسلمان  امریکا  اور سامراجی طاقتوں  کے خلاف سراپا احتجاج ہيں